خواتین کے مسائل

خواتین کے مسائل اور انکے حل کے لیے ادھر لکھیں

آپ بھی اپنا سوال سب سے نیچے کمنٹس میں لکھ کر بھیج سکتے ہیں بہت جلد اس کا جواب  ملے گا ۔ برائے مہربانی صرف اپنے سوال کا ری پلے کریں

10 Responses to خواتین کے مسائل

  1. مہرین انور says:

    سوال: کیا چھاتیوں کی جسامت میں اِضافہ کرنا ممکن ہے؟ ڈاکٹر صاحب اگر اس کے لیے کوئی ورزش ہے تو وہ بتا دیں

    • جواب:چھاتیوں کی جسامت کا معاملہ جینیاتی ہے ،یعنی چھاتیوں کی جسامت ،جینیاتی خاکے کے حساب سے زیادہ نہیں بڑھ سکتی ۔تاہم اِس حقیقت کے باوجود آپ اپنی چھاتیوں کی جسامت بڑھانا چاہتی ہیں تو ہمارے ادارےکی مؤثر ادویات دستیاب ہیں۔ اگر زنانہ ہارمونز کی وجہ سے برسٹ ڈیولپمنٹ نہ ہوئی ہے تو یہ
      قابل علاج ہے ۔
      اس کے مسلئہ کےگارنٹی سے علاج کےلیے 03006397500پر ہم سے رابطہ کریں۔

      تاہم چند ورزشیں اور مساج ایسے ہیں جن کے ذریعے ،اِس سلسلے میں کچھ فائدہ ہوسکتا ہے ۔درحقیقت چھاتیوں کی بناوٹ میں ،چربی، دودھ پیدا کرنے والے غدود ،دودھ کی نالیاں ہوتی ہیں اور چھاتیوں میں کسی قِسم کے عضلات نہیں ہوتے ۔ تاہم پیٹ کے عضلات کو ہم آہنگ کرنے والی ورزشوں کے ذریعے پیٹ کے عضلات ہموار ہو جاتے ہیں اور چھاتیوں کے نیچے والے عضلات کی ساخت بہتر ہوجاتی ہے ،اور اِس طرح چھاتیاں نمایاں ہوجاتی ہیں اور بڑی نظر آتی ہیں۔اِس قِسم کی ورزشوں میں تیراکی کرنا بہترین ورزش ہے ۔ ذیل میں چند ایسی ورزشیں ہیں جو کسی حد تک مفید ثابت ہوسکتی ہیں:

      (a)سینہ کے اطراف سے دباؤ ڈالنا

      ٭ اپنے دونوں ہاتھوں میں پانچ پانچ پاؤنڈ کا ایک وزن پکڑ لیجئے۔

      ٭ اپنے گھٹنوں کو قدرے جھکا کر کھڑی ہوجائیے ، اپنے پیروں کو کندھوں کے برابر کھولئے ، کمر سیدھی رکھئے ، عضلات کو کھینچ کر رکھئے ۔

      ٭ اپنی کہنیوں کو اپنے جسم سے 90درجے پر باہر کی جانب موڑئیے۔

      ٭ آہستہ آہستہ اپنی کلائیوں ،کہنیوں اور ہاتھوں کو ،اپنے سینے کے سامنے،ساتھ مِلائیے ۔اِن اعضاء کی حرکت کا آغاز سینے کے اطراف کے عضلات سے کیجئے۔

      ٭ آہستہ آہستہ اپنے بازوؤں کو اُن کی اصل حالت پر واپس لے جائیے۔

      ٭ 12کے سیٹ 3مرتبہ دُہرائیے۔

      ٭ پیٹ کے بَل لیٹ جائیے۔

      ٭ اپنے گھٹنوں کو موڑئیے اور اپنے ٹخنوں کو کراس کر لیجئے ۔

      ٭ اپنی کہنیوں کو موڑ کر اپنے ہاتھوں کو اپنے کندھوں سے قدرے آگے رکھئے۔

      ٭ اپنے عضلات میں تناؤ پیدا کیجئے اور آہستہ آہستہ اپنے بازوؤں کو سیدھا کیجئے اور اپنے جسم کو اُوپر اُٹھائیے اِس طرح کہ آپ کا توازن آپ کی ہتھلیوںاور آپ کے گھٹنوں پر ہوگا اور آپ کا جسم آپ کے گھٹنوں اور سَر کے ساتھ ایک سیدھ میں ہوگا۔

      ٭ اپنے چہرے کو فرش کے ساتھ مِلا کر رکھئے اور اپنی ریڑھ کی ہڈّی کو سیدھا رکھئے ۔

      ٭ اپنی کہنیوں کو موڑئیے تا کہ آپ کا جسم فرش سے متوازی ہوجائے اور دُوبارہ ڈنٹر نکالئے۔

      ٭ کوشش کیجئے کہ آپ کا سینہ فرش سے نہ مِلنے پائے۔

      ٭ 10کے سیٹ 2مرتبہ دُہرائیے، جب کہ درمیان میں کوئی اور ورزش کی جائے۔

      (c) تِرچھا دباؤ

      ٭ اپنے دونوں ہاتھوں میں پانچ پانچ پاؤنڈ کا ایک وزن پکڑ لیجئے۔

      ٭ ایک تِرچھے بورڈ پر لیٹ جائیے یا پھر فرش پر اپنی بالائی کمر، گردن اور سَر کے نیچے سخت تکیے رکھئے یا کوئی اور سخت چیز رکھئے مثلأٔ فوم کا ایک بڑا ٹُکڑا ۔

      ٭ اپنی کہنیوں کو اپنے جسم سے 90درجے پر باہر کی جانب موڑئیے۔

      ٭ سیدھا رہنے کے لئے ،اپنی تھوڑی کو ہلکے سے لگائیے لیکن اپنے جسم کو ڈھیلا اور فطری انداز میں رکھئے۔

      ٭ آہستہ آہستہ وزن کے سِروں کو دبائیے یہاں تک کہ یہ آپ کے سینے کے سامنے آجائیں ،اِس دوران اپنی کہنیوں کو قدرے موڑ کر رکھئے ، لیکن دونوں وزنوں کو آپس میں مِلنے نہیں دیجئے۔

      ٭ 12کے سیٹ 3مرتبہ دُہرائیے، جب کہ درمیان میں کوئی اور ورزش کی جائے۔

      چھاتیوں کے مساج سے خون کا دوران بڑھ سکتا ہے جس کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ یہ چھاتیوں کی جسامت کو کسی حد تک بڑھا سکتا ہے۔تاہم اِس نظریے کی شُماریاتی لحاظ سے تصدیق ہونا ابھی باقی ہے ۔

      ہربل آئل اور کیپسول ہیں آپ 03006397500 پررابطہ کرکے منگا سکتے ہیں یاد رکھئے کہ ،چھاتیوں کو بڑھانے کے لئے حتمی طریقہ ،مناسب ورزش ہی ہے

  2. خالدہ ریاض says:

    سوال :لیکوریا کیا ہے؟ کیا یہ بانجھ پن کا سبب بنتا ہے؟

    • ڈاکٹر و حکیم ارشد ملک says:

      ہر عورت کی فُرج میں سے کچھ رطوبتوں کا اخراج ہوتا ہے ۔کیمیائی توازن قائم رکھنے کے لئے ،یہ اخراج ،فرج کا نارمل دفاعی نظام ہوتا ہے ۔اور اِس اخراج کے ذریعے فُرج کے عضلات کی نارمل لچک بھی قائم رہتی ہے۔تاہم اگر اِس اخراج کی مقدار واضح طور پر بڑھ جاتی ہے اور یہ سفید رنگ کی گاڑھی رطوبت بن جائے تو اِسے لیکوریا کہا جاتا ہے ۔یاد رکھئے کہ، اگر فُرج سے ہونے والے اخراج کا رنگ زردی مائل ہو اور اِس کی بُو ناگوار ہو تو اِسے لیکوریا کہا جاتا ہے ۔ممکن ہے کہ یہ کسی انفکشن یا سرطان کی علامت ہو۔کئی مرتبہ لیکوریاکی وجہ سے سوزاک ہوجاتا ہے ۔ کچھ کیسز میں لیکوریا کی وجہ سے بیضے ضائع ھو جاتے ہیں اور یہ مردانہ سپرمز کی ھلاکت کا سبب بھی بنتا ہے۔لیکوریا کی وجہ سے رحم کا ورم ہوجاتاھے۔
      لیکوریا کا سب سے زیادہ اہم سبب ہارمون ایسٹروجین اور دِیگر ہارمونی عدم توازن ہوتے ہیں۔ایسٹروجین ایک زنانہ جنسی ہارمون ہوتا ہے جو جسم کے مختلف افعال کو کنٹرول کرتا ہے ۔ایسٹروجین اور دِیگر ہارمونی عدم تواز ن بانجھ پن (حاملہ ہونے کی صلاحیت نہ ہونا)کا سبب بن سکتے ہیں ۔لہٰذا لیکوریا کی وجہ سے حمل قائم ہونے میں دشواری پیدا نہیں ہوتی بلکہ لیکوریا کے اسباب ،حمل قائم کرنے میں دشواری کا سبب بنتے ہیں۔ مزید معلومات حاصل کرنے کے لئے ،براہِ کرم03006397500پررابطہ کیجئے ۔

  3. Afshan says:

    سوال: مجھے کس طرح معلوم ہوسکتا ہے کہ میرا کنوارہ پن ختم ہوگیا ہے؟

    • ڈاکٹر و حکیم ارشد ملک says:

      جواب: عام طور پر ،کنوارہ پن کو پردہ بکارت کے سالم ہونے سے منسلک کیا جاتا ہے۔پردہ بکارت ایک باریک جِھلّی ہوتی ہے جو فُرج کی دیواروں کے درمیان تنی ہوئی ہوتی ہے اور اِس کے بیچ میں ایک چھوٹاسوراخ ہوتا ہے۔جنسی ملاپ کے نتیجے میں اِس پردہ بکارت کے پھٹ جانے کو ،عام طور پر کنوارہ پن ختم ہوجاناکہا جاتا ہے۔اور اِس کے پھٹ جانے سے جنسی ملاپ کے بعد کچھ خون آتا ہے۔یہ بات جاننا بھی اہم ہے کہ چند عورتوں میں ،پردہ بکارت کی جِھلّی اِس قدر لچک دار ہوتی ہے اور اِس کا سوراخ اتنا بڑا ہوتا ہے کہ اِس میں سے عضو تناسل آسانی سے فُرج میں داخل ہوجاتا ہے اور ایسی صورت میں پردہ بکارت پھٹتا نہیں ہے۔بعض مرتبہ لڑکیوں کے کھیل کود کی وجہ سے نو عمری میں پردہ بکارت پھٹ جاتا ہے اس لیے پردہ بکارت کو کنوارہ پن کی علامت نہ سمجھا جائے ۔

      ایک بار پردہ بکارت کے پھٹ جانے اور کنوارہ پن ختم ہوجانے کے بعد کسی بھی طبّی طریقے سے اِس عمل کو پلٹایا نہیں جا سکتا ۔مگر ہماری میڈیسن ورجن پلس کے ذریعےسے فرج کودوبارہ تنگ کیا جا سکتا ہے۔ شادی شدہ خواتن یا ایسی خواتین جو بچے کی پیدائش کے بعد ہونے والے کھلے پن سے پریشان ہوں یا خاوند کے تانوں سے لازما علاج کروائیں صرف خواتین میسج کر سکتی ہیں 03006397500 آپ کا علاج رازداری کے ساتھ ہوگا

  4. Aqsa says:

    Hi Sir…mera masla ye hay k meray husband ka pins bhot chota hay aur wo jaldi say farig ho jatay hain aur mujay khush ni kr saktay m is say bhot tang houn please kuch hal btain

    • ڈاکٹر و حکیم ارشد ملک says:

      Aap apny khawand ko kisi maher Hakim say ilaj ka bar bar mashwara dain ,
      aur un ko batain keh wo Surat -e Anzal wagara ka ilaj karwain.
      سنو : جس نے کی شرم اس کے پھوٹے کرم

  5. Nadia says:

    Main 24 years ki hu,Meri shadi ko 3 month ho gye,but pregenent nae huwi,mery husband intercorse kr k free hony k 5 mint bd mery ander sy un ka lays dar pani bahir aa jata ha

    • ڈاکٹر و حکیم ارشد ملک says:

      جواب: یہ ایک عام عقیدہ ہے کہ جنسی ملاپ کے بعد پیشاب کر لینے سے ،پیشاب کی نالی کے بہت سے انفکشنز سے بچاؤ حاصل ہو جاتا ہے۔تاہم اِس سلسلے میں ایسی کو ئی طبّی سفارش موجود نہیں ہے۔ لیکن حاملہ ہونے کے لیے ملاپ کے فورا بعد عورت کو پشاب نہیں کرنا چاہیے لیٹے لیٹے پاوں 4 فٹ اوپر کرکے 2 یا 3 مرتبہ اس طرح کھانسیں کہ خاوند کا پانی بچہ دانی میں چلا جائے سیدھی کروٹ پر لیٹنا چاہیے اٹھنا بیٹنا منع ہے ۔کم از کم تین گھنٹے تک آرام کریں۔

Leave a Reply